بچوں کا رونا فوری بند کریں

بچوں کا رونا فوری بند کریں


اگر باوجود کوشش کے بچوں کا رونا بند نہ ہو تو مندرجہ ذیل تراکیب اختیا کرکے آپ بچوں کا رونا بند کر سکتے ہیں۔

بچوں کو جسم میں درد یا کوئی مسئلہ درپیش ہو تو وہ رونے لگ جاتیں ہیں۔ بڑوں کی طرح بچے یہ نہیں بتا سکتے کہ کہاں درد ہو رہا ہے۔لیکن زمانہ قدیم سے انسان جسم کے مختلف حصوں کو دبا کا درد کا علاج کرتے تھے۔چینی ماہرین کا بھی کہنا ہے کہ بچوں کے پاؤں کو دبا کر درد کو کم کیا جا سکتا ہے ۔ 

یہ ایک ایسا علم ہے جس میں جسم کے مختلف حصوں کو دبا کر درد کو ٹھیک کیا جا سکتا ہے اور فوری سکون بھی ملتا ہے اگر بچوں کو کہی چوٹ لگ جائے یا کہی درد ہو رہی ہو تو وہ رونے لگ جاتے ہیں لہذا ان کی درد کا علاج ان کے جسم کے مختلف حصوں کو دبا کر کیا جا سکتا ہےآئیے ہم آپ کو بتاتے ہیں کہ جسم کے کونسے حصے کو دبا کر کونسا درد کم کیا جا سکتا ہے ہا ختم کیا جا سکتا ہے۔

سر یا دانت کا درد:

اگر بچہ دانت نکال رہا ہو تو اس کے سر میں اور دانتوں میں درد ہو جاتا ہے اگر پاؤں کی انگلیوں کے کونوں بالخصوص انگھوٹھے کے کونے کو ہلکا ہلکا دبانے سے درد کو کم کیا جا سکتا ہے اور بچے کو سکون ملتا ہے جس سے بچہ فوری رونا بند کر دیتا ہے ،

زکام اور بہتی ناک:

اگر بچے کو سردی لگ جائے تو اس کی ناک بہنے لگتی ہے اور زکام ہو جاتا ہے جس سے بچہ رونے لگ جاتا ہے لہذا بچے کے پاؤں کے درمیانی حصے کو دبانے سے بچے کو آرام ملتا ہے اور بچہ رونا بند کر دیتا ہے

پیٹ اور معدہ کی درد:

ہمارے پاؤں کی آرک براہ راست ہمارے پیٹ سے منسلک ہوتی ہے اور اگر معدہ میں کوئی مسئلہ درپیش ہو تو اس جگہ پر دباے سے سکون ملتا ہے اور پیٹ اور معدہ کی درد میں خاطر خواہ ارام مل جاتا ہے۔

سینے کے مسائل:

اگر ہم پاؤں کے اس حصے کو دبائیں جو حصہ زمین کو چھوتا ہے تو بچے کے سینے کی جکڑن اور بلغم میں آرام ملتا ہےاور بچہ رونا بند کر دیتا ہے اور جلد از جلد ڈاکٹر سے بھی رجوع کرنا چاہئے کیونکہ یہ ایک عارضی علاج ہے ۔

 

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔