یورک ایسڈ کا آسان علاج

ہمارے جسم میں یورک ایسڈ (uric acid) کی سطح کا بڑھنا ایک عام سی بات ہوگئی ہے اور اکثر لوگ اس جانب کوئی خاص توجہ نہیں دیتے جبکہ یورک ایسڈ کی سطح میں مسلسل اضافہ انہیں جس مرض کا شکار بناتا ہے وہ جوڑوں کا درد ہے- اور ان دونوں امراض کے مریض ہمیں اپنے اردگرد عام دکھائی دیتے ہیں- یورک ایسڈ میں اضافہ جوڑوں میں گھٹیا بناتا ہے جس سے جوڑوں میں درد٬ سوزش اور سوجن پیدا ہوتی ہے- اور یہ درد اور سوزش بعض اتنی زیادہ ہوتی ہے کہ انسان چلنے پھرنے سے بھی قاصر ہوجاتا ہے- یورک ایسڈ بڑھنے کی وجوہات میں بلڈ پریشر٬ موٹاپا٬ خون کی کمی اور چنبل شامل ہے- طبی ماہرین کے مطابق بہت زیادہ سرخ گوشت کا استعمال یورک ایسڈ بڑھا دیتا ہے- تاہم ہم چند قدرتی غذاؤں کو اپنی خوراک کا حصہ بنا کر یورک ایسڈ کی اضافی سطح کو کم کر سکتے ہیں- وہ قدرتی غذائیں کونسی ہیں آئیے ہم آپ کو بتاتے ہیں-

کیلے
کیلے جسم میں یورک ایسڈ کی سطح کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں- کیلے گھٹیا بننے سے روکنے یا پھر جوڑوں کے دیگر امراض کے شکار مریضوں کے لیے ایک بہترین غذا ہیں- البتہ ان امراض کے علاج کے لیے روزانہ 8 سے 9 کیلے کھانے پڑتے ہیں اور یہ عمل تین سے چار روز تک مسلسل جاری رہتا ہے- مرض سے چھٹکارے کی واضح علامت یہ ہوگی کہ آپ کے جوڑوں پر موجود سوجن اور سوزش کم یا ختم ہوجائے گی-

اسٹرابیری
اسٹرابیری بھی ایک ایسی قدرتی غذا ہے جو جسم میں پائے جانے والے کیمیکل کی بلند سطح کے خلاف مزاحمت کرتی ہے- یہ مزیدار غذا یورک ایسڈ کو کم کر کے آپ کو گھٹیا سے آرام پہنچا سکتی ہے-

سیب
سیب میں malic ایسڈ کی بھاری مقدار پائی جاتی ہے اور یہ ایسڈ قدرتی طور پر یورک ایسڈ کے اثرات کو بےاثر کرتا ہے اور اس سے پیدا ہونے والے امراض کے حوالے سے آرام بھی فراہم کرتا ہے- بہترین فوائد کے حصول کے لیے روزانہ ایک سیب کھانا ضروری ہے-

چیری
چیری میں anthocyanin پائی جاتی ہے جو کہ سوزش کے خلاف مزاحمت کرتی ہے- چیری نہ صرف یورک ایسڈ کی سطح کو بڑھنے سے روکتی ہے بلکہ جسم میں موجود مختلف کیمیکل کے مرکب کے نقصانات سے بھی محفوظ رکھتی ہے- یورک ایسڈ کی سطح میں کمی کے لیے روزانہ 200 گرام چیری کھانا ضروری ہے-

پانی
پانی تمام جانداروں کے لیے ضروری ہے- پانی جسم میں موجود اضافی یورک ایسڈ اور زہریلے مادوں کو خارج کرتا ہے جس سے گھٹیا سے نجات حاصل ہوتی ہے- ماہرین کے مطابق روزانہ 10 سے 12 گلاس پانی ضرور پینا چاہیے-

سبزیوں کا جوس
جسم میں یورک ایسڈ کی سطح کو کم کرنے کا یہ ایک آسان اور نہایت اہم گھریلو ٹوٹکا ہے- گاجر کے جوس کو کھیرے کے جوس اور چقندر کے جوس میں شامل کر کے پینے سے آپ کو جوڑوں کے امراض سے نجات حاصل ہوسکتی ہے-

فائبر والی غذائیں
یونیورسٹی آف میری لینڈ میڈیکل سینٹر کی ایک تحقیق کے مطابق ایسی غذائیں جن میں فائبر کی بھاری مقدار پائی جاتی ہیں جسم میں موجود یورک ایسڈ کی بلند ترین سطح کو کرنے کے حوالے سے مؤثر ثابت ہوسکتی ہیں- اس کے علاوہ یہ دیگر کیمیکل کے مرکب کی سطح کو بھی کم کرتی ہیں۔

images

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔